Thursday, 30 March 2017

باپ کے ساتھ رہنے والے بچے بہتر نشوونما پاتے ہیں

برطانوی ماہرین نے ایک دلچسپ سروے میں انکشاف کیا ہے کہ جو بچے اپنے والد کےساتھ رہتے ہیں وہ نہ صرف زیادہ
صحتمند، مسرور، نفسیاتی اور جسمانی طور پر بہتر نشوونما پاتے ہیں۔
برطانوی ماہرین کے اس سروے میں یہ بات ثابت ہوئی ہےکہ جو بچے اپنے والد کےساتھ رہتے ہیں وہ نہ صرف ذیادہ صحتمند، مسرور، نفسیاتی اور جسمانی طور پر بہتر نشوونما پاتے ہیں جس سے گھر میں والد کے بہت اہم کردار کی اہمیت بھی واضح ہوئی ہے۔ صرف یہی نہیں جو بچے اپنے سگے والد کے ساتھ زیادہ وقت گزارتے ہیں وہ عملی زندگی میں بھی کامیاب رہتے ہیں۔
لیکن اس سروے کا دوسرا اہم پہلو یہ ہے کہ اگر سگے باپ کی جگہ سوتیلا والد بچوں کے ساتھ رہے تو اس سے بچوں کی صحت اور فلاح پر کوئی خاص اثر نہیں پڑتا۔ اس سے ثابت ہوا کہ سوتیلا باپ کبھی بھی سگے باپ کی جگہ نہیں لے سکتا 
اور نہ ہی اس سے بچوں کو فلاح اور بہتری پر کوئی اثر پڑتا ہے۔
لندن اسکول آف اکنامکس کے ماہرین نے اس سروے کے لیے ایک ہزار بچوں کا جائزہ لیا اور ان میں معاشی صورتحال، تعلیم، صحت اور دیگر اہم رحجانات کا جائزہ اس وقت سے لینا شروع کیا جب بچوں کی اوسط عمر 7 برس تھی۔ اس سروے میں سگے والد، سوتیلے والد اور صرف اپنی ماں کے ساتھ رہنے والے بچوں کا جائزہ لیا گیا۔
تحقیق سے معلوم ہوا کہ جب کسی خاندان میں سوتیلے باپ نے قدم رکھا تو مسائل ویسے ہی رہے جیسے کہ پہلے تھے۔ اس کے علاوہ بچوں کی تعلیمی کارکردگی، جرائم ، بگاڑ اور رویے میں زیادہ فرق دیکھنے میں نہیں آیا۔ سروے میں یہ بھی دیکھا گیا کہ اگر سگا باپ بچوں کو چھوڑ کرچلاجائے یا فوت ہوجائے تو اس گھر میں ایسے مسائل جنم لیتے ہیں جو بچوں کو متاثر 
Credit کرتے ہیں اور وہ سوتیلے باپ کی آمد سے حل نہیں ہوتے۔

Sunday, 18 September 2016

A 10-month Umrah season proposed

A government proposal to extend the Umrah season from the current eight months to 10 is being considered, local media said quoting informed sources.
The proposal, according to which Moharram and Shawwal would be included in the Umrah season, comes in the context of having a new vision for Makkah and Madinah, the sources said.
Umrah visas currently cover the period between Safar and the end of Ramadan.
The proposal is also in line with the objectives of the Saudi Vision 2030, which aims to raise the number of Umrah pilgrims from 8 million to 30 million by 2030.
The vision is meant to enrich the pilgrims’ religious and cultural journey in the Kingdom through the construction and expansion of museums and historic and cultural sites.
According to the vision, the biggest Islamic museum in the world will be established. It will collect, store, display and document items aimed to acquaint visitors with the rich Islamic history.
Meanwhile, the Makkah Chamber of Commerce and Industry (MCCI) organized a workshop to discuss a detailed road map for sustainable growth in all business sectors in Makkah through Haj and Umrah.
MCCI Chairman Mahir Jamal said the next period will witness the completion of mega projects in Makkah, to keep up with the growth of Muslims in the world. Muslims number about 1.62 billion worldwide, representing 23 percent of the global population.
“This prompted our wise leadership to envisage an expected increase in the number of pilgrims performing Haj and Umrah from 8 million to 30 million by 2030,” he said.
The National Transformation Program 2020 has also put forth strategic goals for the Ministry of Haj and Umrah, aimed at facilitating the journey for Haj and Umrah pilgrims

LinkWithin

Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...